100651

افغان انٹیلی جنس ایجنسی کے سربراہ اور ا فغان صدر کے مشیر سلامتی امور محمد حنیف اتمر طالبان سے خفیہ مذاکرات میں مصروف

کابل (عامر لیاقت نیوز ) افغانستان میں طویل قیام کی امریکی امیدوں پراوس پڑ گئی ہے کیونکہ کابل سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق افغان صدر اشرف غنی نے طالبان کے آگے گھٹنے ٹیک دیے ہیں ، افغان انٹیلی جنس ایجنسی کے سربراہ معصوم استینک زئی اور ا فغان صدر کے مشیر سلامتی امور محمد حنیف اتمر طالبان سے خفیہ مذاکرات میں مصروف ہیں ۔عامر لیاقت نیوز کو موصول ہونے والی رپورٹ کے مطابق طالبان اور افغان حکومت کے درمیان خفیہ مذاکرات کا سلسلہ تقریباً دوہفتوں سے جاری ہے ، بعض ذرائع سے پتہ چلتا ہے کہ اب تک مذاکرات کے دو دور قطر میں مکمل ہوچکے ہیں۔مذاکرات کاسلسلہ دو سطحوں پر جاری ہے ایک طرف تو افغان انٹیلی جنس ایجنسی کے سربراہ معصوم استینک زئی طالبان سے رابطوں میں ہیں تو دوسری جانب افغان صدر اشرف غنی کے مشیر سلامتی امور محمد حنیف اتمر بھی علیحدہ طور پرطالبان سے مذاکرات کررہے ہیں جبکہ ان ملاقاتوں میں افغان طالبان کے ہلاک بانی ملا محمد عمر کے بھائی ملا عبدالمنان بھی موجود تھے تاہم مذاکرات کے نئے سلسلے میں پاکستانی حکام حصہ نہیں ہیں۔نئے طالبان رہنما ہیبت اللہ اخونزادہ کے معاملات سنبھالنے کے بعد گذشتہ چند ماہ کے دوران افغانستان میں ہونے والی طالبان کارروائیوں میں تیزی دیکھی گئی اور قندوز سمیت لشکر گاہ میں بھی طالبان نے حملے اور کارروائیاں کیں۔واضح رہے کہ گذشتہ دو سال کے دوران طالبان افغانستان میں کافی مضبوط ہوچکے ہیں اور افغانستان کے تقریباً 70فیصد حصوں پر ان کا کنٹرول ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں